180

میری جدوجہد ہار اور جیت کی نہیں بلکہ آنی والی نسلوں کے لیے ہے. حافظ عبدالرزاق

سپین(نمائندہ خصوصی)سپین کے صوبہ کتالونیہ میں 21 دسمبر کو ہونے والے انتخابات کے موقع پر تمام دوست احباب کا بہت بہت شکریہ. آپ سب کی پر خلوص محبت اور دعاؤں کی وجہ سے سپین کی بڑی سیاسی جماعت سوشلسٹ پارٹی نے مجھے دوسری بار کتلان پارلیمنٹ کا امیدوار بنایا. میری جدوجہد ہار اور جیت کے لیے نہیں بلکہ اس دیس میں آنے والی نسلوں کے لیے راہ ہموار کرنا. ان کے لیے ایسا پلیٹ فارم تیار کرنا ہے کہ جس میں وہ اپنے کلچر. مذہب اور نظریات کے مطابق مثبت انداز میں زندگی بسر کر سکے. اور آنے والے وقت میں یہاں قومی اسمبلی. صوبائی اسمبلی. اور سینٹ میں بھی اپنے ملک کی نمائندگی کر سکے اک یہ جدوجہد ابتدائی دور میں ہے لیکن آنے والے سالوں میں اس کا آنے والی نسلوں کو مثبت انداز میں فائدہ ضرور ہوگا… ممکن ہے کہ میں مخالفت کرنے والوں سے گھبرا جاتا. مختلف قلم کاروں کی قلم کی نظر ہوجاتا. ہر ملنے والی دھمکیوں سے ڈرجاتا لیکن میں اپنے اللہ کے بھروسے سے کھڑا رہا ہوں. کھڑا ہوا ہوں اور کھڑا رہوں گا انشاءاللہ. میری کوشش میری جدوجہد جاری رہے گی. میرا سفر اپنی منزل کی طرف رواں دواں رہے گا. میں اپنی کمیونٹی کے لیے روشنی کی تلاش میں ہوں اور انشاءاللہ روشی حاصل کر کے رہوں گا کیونکہ مجھے یقین ہے کہ یہی چراغ جلے گے تو روشنی ہو گی . مجھے فخر ہے کہ میں ایک عام پاکستانی ہوں میں جیسا بھی ہوں آپ میں سے ہوں اور میری کوشش جدوجہد بھی پاکستان اور تمام پاکستانیوں کے لیے ہے. آج نہیں تو کل. ابھی نہیں تو پھر سہی لیکن یہاں پاکستانی کامیاب ضرور ہونگے انشاءاللہ اور اپنی کامیابی کا لوہا انتہائی مثبت انداز میں منواہیں گے انشاءاللہ. انگلینڈ کے بعد یہاں سپین میں پاکستانی جس انداز میں محنت کر رہے ہیں آگے بڑھ رہے ہیں اور مختلف قسم کے سیکٹر میں کامیابی حاصل کر رہے ہیں وہ بھی انتہائی کم عرصے میں انشاءاللہ اگلے چند سالوں میں برطانیہ کی طرح یہاں بھی پاکستانی انتہائی اہمیت کے حامل ہونگے انشاءاللہ

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں