8

’’آئی ایم ایف معاہدہ نہیں کرے گا جب تک ڈالر 184روپے کا نہ ہوجائے اور ۔ ۔ ۔ ‘‘ سینئر صحافی نے سب سے خطرناک پیشن گوئی کردی

اسلام آباد(نمائندہ خصوصی) انٹرنیشنل مانیٹری فنڈ (آئی ایم ایف) اور پاکستان کے درمیان بیل آءوٹ پیکج کے لیے معاملات طے ہونے کے قریب پہنچ چکے ہیں اور اب سینئر صحافی محمد مالک نے پیشن گوئی کی ہے کہ جب تک ڈالر 184اور شرح سود19سے 20فیصدتک نہیں جاتی، معاہدہ طے نہیں پائے گا ۔

مائیکروبلاگنگ ویب ساءٹ ٹوءٹر پر محمد مالک نے لکھا کہ ’’ میں نے اکتوبر 2018ء میں کہاتھاکہ شرح سودساڑھے بارہ فیصد اور ڈالر کی قیمت 150روپے ہونے تک ڈیل پر دستخط نہیں کرے گی ، دونوں کام ہی ہوگئے ، اب میں آپ کو بتا رہاہوں کہ آئی ایم ایف ڈالر کی قیمت 184روپے اور شرح سود19سے 20فیصدتک پہنچنے تک نہیں رکے گا، میرے ملک کیلئے میں توقع کرتاہوں کہ اس مرتبہ میں غلط ہوں ‘‘ ۔

اپنی ایک اور ٹوئیٹ میں محمد مالک نے لکھا کہ ’’ پیپلزپارٹی کے دور میں حفیظ شیخ کے بطور وزیرخزانہ قرضے سب سے تیزی سے بڑھے ، اس لیے وزیراعظم کمیشن کو ان سے شروعات کرنی چاہیں ،جب رقم آٹھ ہزار بلین سے چوبیس ہزار پر پہنچی ، وہ اب کابینہ میں موجود ہیں ، اس لیے مسٹروزیراعظم کوئی مشکل ہی نہیں ‘ ۔

انہوں نے مزید لکھا کہ ’یہ سب کچھ اسد عمر نے میرے شو میں کہا جب ہم حفیظ شیخ اور ڈاکٹر باقر کے نظریات کے بارے میں گفتگو کررہے تھے ، ورلڈبینک اور آئی ایم ایف پیکج کے پیش نظر ان کاکہناتھاکہ ایک شخص کے تجربات ہی سب کچھ ہیں ، دونوں کیلئے آئی ایم ایف اور ورلڈبینک عزیز ہیں اور پاکستان اور قوم کی فکر نہیں ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں