11

کیا آپ کو معلوم ہے بلی کی مونچھیں اس کے کس کام آتی ہیں؟ ان کی وجہ جان کر آپ بھی قدرت کے نظام پر دنگ رہ جائیں گے

نیویارک(مانیٹرنگ ڈیسک) بلیوں کی مونچھیں ہوتی ہیں جن کے متعلق ایک عام تاثر پایا جاتا ہے کہ ان مونچھوں کے ذریعے بلیاں اپنا توازن برقرار رکھتی ہیں، بالکل اسی طرح جیسے اکثر سینگوں والے جانوروں کے سینگوں کے متعلق یہی تاثر پایا جاتا ہے۔ تاہم ماہرین کا کہنا ہے کہ یہ تاثر سراسر غلط ہے۔ بلی کی مونچھوں کا اس کے جسمانی توازن کے ساتھ کوئی تعلق نہیں۔ ویب سائٹ thenest.com کے مطابق ماہرین کا کہنا ہے کہ بلیوں کی مونچھیں دراصل ایک سنسر کا کام کرتی ہیں۔ یہ فاصلے، جگہ اور مختلف اشیاءکے سائز کا پتہ لگاتی اور بلی کو اس سے آگاہ کرتی ہیں، حتیٰ کہ اندھیرے میں بھی بلی اپنی مونچھوں کے ذریعے کسی بھی فاصلے یا کسی بھی چیز کے سائز کا پتا چلا لیتی ہے۔

رپورٹ کے مطابق بلی کی مونچھیں تنگ جگہوں ، مثال کے طور پر چوہوں کے بل وغیرہ کے سوراخ کی چوڑائی بھی کا بھی اندازہ لگاتی ہیں۔ بلی اندھیرے میں بھی اپنی مونچھوں کے ذریعے کسی بل کا پتا چلا لیتی ہے کہ وہ کتنا چوڑا ہے۔ اگر بلی کسی تنگ جگہ میں جانا چاہتی ہے تو یہ اس کی مونچھیں ہی ہیں جو اسے بتاتی ہیں کہ وہ اس تنگ جگہ میں جا سکتی ہے یا نہیں اور کہیں اندر پھنس تو نہیں جائے گی۔

ماہرین کے مطابق بلی کی مونچھوں کی مختلف حالتیں اس کے موڈز کے بارے میں بتاتی ہیں۔ اگر بلی کی مونچھیں پرسکون حالت میں نیچے کی طرف جھکی ہوئی ہوں تو اس کا مطلب ہے کہ بلی بھی پرسکون حالت میں ہے اور آرام کر رہی ہے۔ اگر بلی کی مونچھیں دونوں اطراف میں تنی ہوئی ہوں تو اس کا مطلب ہے کہ بلی دفاعی پوزیشن میں ہے، وہ بہت غصے میں ہے یا کسی چیز سے ڈری ہوئی ہے اور اگر بلی کی مونچھیں آگے کی طرف تنی ہوئی ہوں تو اس کا مطلب ہے کہ بلی کسی تجسس میں مبتلا ہے، وہ کسی چیز کے شکار میں ہے یا کھیلنے کے موڈ میں ہے۔ماہرین کا کہنا تھا کہ بلی کی مونچھیں چونکہ ایک باقاعدہ عضو ہیں جو ان کے لیے سنسر کا کام کرتا ہے چنانچہ کبھی بھی اس کی مونچھیں کاٹنی نہیں چاہئیں۔ یہ بالکل ایسے ہی ہو گا جیسے آپ نے بلی کی آنکھیں نکال دی ہوں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں